کیا امام بیہقی شافعی علیہ الرحمہ متعصب تھے؟؟؟

بعض دیوبندیوں نے طوفان بد تمیزی شروع کیا ہوا ہے کہ امام بیہقی شافعی علیہ الرحمہ احناف کے ساتھ متعصب تھے۔

جب کہ امام بیہقی علیہ الرحمہ نے امام ابوحنیفہ علیہ الرحمہ اور امام ابویوسف کی توثیق کی ان کو ثقہ کہا

اس کی بات کا ثبوت یہ ہے:

وقرأت في كتاب أبي عبد الله محمد بن محمد بن يوسف بن إبراهيم الدقاق بروايته عن القاسم بن أبي صالح الهمذاني , عن محمد بن أيوب الرازي , قال: سمعت محمد بن سابق , يقول: سألت أبا يوسف , فقلت: أكان أبو حنيفة يقول القرآن مخلوق؟ , قال: معاذ الله , ولا أنا أقوله , فقلت: أكان يرى رأي جهم؟ فقال: معاذ الله ولا أنا أقوله ” رواته ثقات

[الاسماء والصفات للبیہقی ج1 ص 611 رقم الحدیث 550]

اس روایت کی سند میں امام ابوحنیفہ اور امام ابویوسف علیہما الرحمہ دونوں موجود ہیں اور امام بیہقی علیہ الرحمہ کی سند کے رواۃ کو ثقات کہہ رہے ہیں۔

اس کے علاوہ اپنی کتب میں کافی جگہ امام ابو حنیفہ علیہ الرحمہ کے لیے کلمات خیر کہہ ایک جگہ سند میں فرماتے ہیں:

أخبرنا أبو عبد الله الحافظ , أخبرني محمد بن علي بن دحيم الشيباني , ثنا أحمد بن حازم بن أبي غرزة , ثنا عبيد الله بن موسى , ثنا النعمان بن ثابت أبو حنيفة رحمه الله , عن أبي الزبير , عن جابر بن عبد الله…الخ

[السنن الکبری للبیہقی ج 5 ص 532 رقم الحدیث 10769]

اس سند میں دیکھا جا سکتا ہے کہ امام بیہقی علیہ الرحمہ نے خصوصا امام ابوحنیفہ علیہ الرحمہ کے لیے “رحمہ اللہ” کے الفاظ کہہ۔

اس کے علاوہ امام محمد بن الحسن الشیبانی کی تعریف کی اور ان کے اقوال سے بہت جگہ نقل کیے ان پر کوئی جرح نہیں کی اور نہ ہی نقل کی۔

پتہ نہیں امام بیہقی علیہ الرحمہ کیسے متعصب ہیں ان دیوبندیوں کے نزدیک یا صرف امام بیہقی علیہ الرحمہ کا بغض ہے؟؟؟؟

اگر متعصب ہوتے تو ایسا کچھ بھی نہ کہتے نہ لکھتے…!!!

باقی دلائل کے ساتھ اختلاف کرنے سے کوئی بندہ متعصب نہیں بن جاتا کیونکہ دلائل کی وجہ سے خود امام ابوحنیفہ اور صاحبین اور طرفین کا بھی کافی اختلاف ہے۔

لہذا اللہ عزوجل ہمیں صحیح بات کہنے اور سمجھنے کی توفیق عطاء فرمائے۔ (آمین)

✍رضاءالعسقلانی غفراللہ لہ

6 جنوری 2019ء