چکڑالوی فرقہ (منکرین حدیث ) کے عقائد و نظریات

چکڑالوی فرقہ (منکرین حدیث ) کے عقائد و نظریات

منکرینِ حدیث کو چکڑالوی فرقہ اور پرویزی فرقہ بھی کہا جاتا ہے چکڑالوی اس لئے کہا جاتاہے کہ اس فرقے کا بانی عبداللہ چکڑالوی ہے ۔

چکڑالوی پہلے غیر مقلّد تھے }

سر سید احمد خان ،غیر مقلّد مولوی چراغ اور عبداللہ چکڑالوی ہم خیال تھے ان تینوں انسانوں نے اسلام میں تحریف کا سلسلہ شروع کیا اور اہلِ تجدّد اور اہل قرآن کے نام سے مو سوم ہونے لگے ۔ غلام احمد پرویز جس کی وجہ سے پر ویزی بھی کہا جاتا ہے پرویز بھی پہلے غیر مقلد تھا ۔

بحرالعلوم علامہ محمد زاہد الکوثری التُرکی فرماتے ہیں کہ تعجب ہے کہ بہت سے چکڑالوی یعنی حدیث کے نہ ماننے والے غیر مقلّد تھے پھر کوئی رافضی ہوگیا اور کوئی قادیانی ہوگیا ۔

(بحوالہ :ترجمہ :مولانا محمد شہاب الدین نوری )

سب سے پہلے عبداللہ چکڑالوی نے انکار حدیث کا فتنہ بر پاکیا مگر یہ فتنہ چند روز میں اپنی موت خود مر گیا ۔حافظ اسلم جیراج پوری نے دوبارہ اس فتنے کو ہوادی اور بجھی ہوئی آگ کو دوبارہ سلگا یا پھر اس کے غلام احمد پرویز بٹالوی نگراں’’ رسالہ طلوعِ اسلام ‘‘نے اس آتش کدہ کی تولیت قبول کرکے رسول دشمنی پر کمر باندھ لی ۔

منکرینِ حدیث (اپنے آپ کو اہلِ قرآن کہلانے والے )

منکرینِ حدیث فرقے کے چند باطل عقائد}

پرویزی فرقے کا پیشوا غلام احمد پرویز اپنے رسالے’’ طلوع اسلام ‘‘میں اپنے باطل نظر یا ت یوں لکھتا ہے ۔

1)…منکر ینِ حدیث ایک جدید اسلام کے بانی ہیں ۔

(بحوالہ :رسالہ طلوع اسلام ص 16،اگست ،ستمبر 1952؁ء )

2)…مرکز ملّت کو ان میں (جزیات نماز میں )تغیّر و تبدل کا حق ہوگا ۔

(بحوالہ :طلوع اسلام ص46ماہ جون 1950؁ء )

3)…میرا دعوٰی تو صرف اتنا ہے کہ فرض صرف دو نماز یں ہیں جن کے اوقات بھی دو ہیں باقی سب نوافل ۔(بحوالہ :طلوع اسلام ص 58ماہِ اگست 1950؁ء )

4)…پھر آج کل مسلمان دو نماز یں پڑھ کر کیوں مسلمان نہیں ہوسکتا ۔

(بحوالہ :لاہوری طلوعِ اسلام ص61، اگست 1950؁ء )

5)…روایات (احادیثِ نبویہ ﷺ)محض تاریخ ہے ۔(بحوالہ :طلوع اسلام ص49ماہِ جولائی 1950؁ء )

6)…پرویز کھتا ہے کہ رسول اللہ ﷺکی سنّت اور احادیث مبارکہ دین میں حجت نہیں ۔رسول اللہ ﷺ کے اقوال کو رواج دیکر جو دین میں حجّت ٹہرایا گیا ہے یہ دراصل قرآن مجید کی خلاف عجمی سازش ہے ۔

7)…حج ایک بین الملّی کانفرنس ہے اور حج کی قربانی کا مقصد بین الملّی کانفرنس میں شرکت کرنے والوں کیلئے خورد نوش کا سامان فراہم کرنا ہے ۔مکّہ معظمہ میں حج کی قربانی کے سوا اضحیہ (عید کی قربانی )

کا کوئی ثبوت نہیں ۔(معاذاللہ )(بحوالہ :رسالہ قربانی از ادارہ طلوع اسلام )

8)…بقرعید کی صبح بارہ بجے تک قوم کا کس قدر روپیہ نالیوں میں بہہ جاتا ہے ۔

(ادارہ طلوع اسلام ص 1ستمبر 1950؁ء )

9)…حدیث کا پورا سلسلہ ایک عجمی سازش تھی اور جس کو شریعت کہا جاتا ہے وہ بادشاہوں کی پیدا کردہ ہے ۔ (معاذاللہ )(بحوالہ :طلوع اسلام ص 17ماہِ اکتوبر1952؁ء )

قارئین !آپ نے منکرین حدیث جو اپنے آپکو اہلِ قرآن کہتے ہیں اُن کے باطل عقائد آپ نے ملاحظہ کئے دشمنانِ رسول ﷺکا مقصد صرف انکار حدیث نہیں بلکہ یہ لوگ درحقیقت اسلام کے سارے نظام کو مخدوش ہر حکم سے آزاد رہنا چاہتے ہیں نمازوں کے اوقات خمسہ ،تعدا درکعات ،

فرائض و واجبات کی تفصیل ،صوم و صلوٰۃ کے مفصّل احکام ،مناسک حج و قربانی ،ازدوا جی معاملات ان تمام امور کی تفصیل حدیث ہی سے ثابت ہے ۔

یہ اپنے آپ کو اہلِ قرآن کہتے ہیں آجکل ٹیلی ویثر ن پر’’ نجم شیراز گروپ‘‘ جو کہ ساری رات کلبوں میں بینڈ باجے بجاتے ہیں گانے گاتے ہیں اور دن میں قرآن کی تفسیر یں بیان کرتے ہیں اور کہتے پھرتے ہیں کہ حدیث کی کیا ضرورت صرف اور صرف قرآن کو تھام لو ان کی ایک ویب سائٹ بھی ہے جو الرحمٰن الرحیم ڈاٹ کام کے نام سے ہے اسکے ذریعہ بھی یہ قوم کو بر گشتہ کر رہے ہیں چہرے پر داڑھی ایسی جیسے داڑھی کا مذاق،جسم پر انگریزوں والا لباس پینٹ اور شرٹ ،ہاتھوں میں بینڈ باجے ،زبان پر گانا اور کہتے ہیں کہ ہم تو قرآن سکھائیں گے پہلے اپنا حلیہ تو بدلو پھر مقدّس قرآن کی بات کرنا ۔

یہ چکڑالوی بھی کہلاتے ہیں ،پرویزی بھی کہلاتے ہیں ،منکرین حدیث بھی کہلاتے ہیں ،نام نہاد اہلِ قرآن بھی کہلاتے ہیں ان کے وہی عقائد ہیں جو پیچھے بیا ن کیے گئے لہٰذا قوم اس زہر آلود فتنے سے بچے اور اپنا ایمان خراب نہ کرے ۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.