کالی مہندی یا سیاہ خضاب لگانا کیسا ہے؟

کالی مہندی یا سیاہ خضاب لگانا کیسا ہے؟

ہمارے ائمہ کی تحقیق کے مطابق (جو کہ احادیث سے ثابت ہے) کالی مہندی یا کالا خضاب لگانا جائز نہیں۔ اس پر متعدد وعیدیں بھی مذکور ہیں۔

امام اہل سنت سیدنا الشاہ امام احمد رضا رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں؛

خضاب سیاہ یا اس کی مثل حرام ہے ۔

( ملفوظات شریف بحوالہ اشعۃ اللمعات، کتاب اللباس، باب الترجل، فصل الف، ج۳، ص۶۰۹)

لیکن اس سے مراد ہرگز یہ نہیں کہ سفید بالوں کو مہندی یا خضاب نہ لگایا جائے، کیونکہ زرد یا لال مہندی کی ممانعت نہیں ہے، چانچہ ایک حدیث شریف میں ہے؛

اس سپیدی کو بدل دو اور سیاہی کے پاس نہ جاؤ۔

(صحیح مسلم،کتاب الزینۃ،باب استحباب الخضاب الشیب بصفرۃ،الحدیث۲۱۰۲،ص۱۱۶۴)

سننِ نسائی شریف کی حدیث میں ہے :

یَاتِیْ نَاسٌ یَخْضَبُوْنَ بِالسَّوَادِ کَحَواصِلِ الْحَمَامِ لَایُرِیْحُوْنَ رَائِحَۃَ الْجَنَّۃِ

کچھ(لوگ) آئیں گے کہ سیاہ خضاب کریں گے جیسے جنگلی کبوتر وں کے نیلگوں پوٹے وہ جنت کی بُونہ سونگھیں گے ۔ (سنن نسائی،کتاب الزینۃ،باب النھی عن الخضاب بالسواد،ج۸،ص۱۳۸)

واللہ ورسولہ اعلم

کتبہ: #افتخارالحسن رضوی

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.