قیامت آنے کا حال اور اس کی نشانیاں

عقیدہ:ایک دن دنیا اور اس کی ہر چیز فنا ہو جائے گی ۔ اللہد کے سوا کچھ باقی نہ رہے گا ، اسی کو قیامت کہتے ہیں ۔ قیامت آنے سے پہلے اس کی نشانیاں ظاہر ہوں گی ۔ جن میں سے کچھ اس طرح ہیں ۔ء دنیا سے علمِ دین اٹھ جائے گا یعنی علمائِ حق اٹھا لئے جائیں گے ۔ء جہالت کی کثرت ہوگی ۔ ء شراب اور زنا کی کثرت ہوگی۔ء مرد اپنی عورت کے کہنے میں ہوگا اور ماں باپ سے جدا رہے گا ۔ ء گانے بجانے کی کثرت ہوگی۔ ء پہلے کے لوگوں پر لوگ لعنت کریں گے ،ان کو برُا کہیں گے ۔ء بدکا ر اور نااہل لوگ سردار بنائے جائیں گے ۔ ء دین پر قائم رہنااتنا کٹھن ہوگا جیسے مٹھی میں انگار لینا۔ ء وقت میں برکت نہ ہوگی یعنی وقت بہت جلد جلد گذرے گا ۔ ء درندے ، جانور ،آدمی سے بات کریںگے ۔ ء سورج پچھم سے نکلے گا ۔ اور اِس نشانی کے ظاہر ہوتے ہی توبہ کا دروازہ بند ہوجائے گا۔ اس وقت اسلام لانا قبول نہ ہوگا۔

اللّٰہ اکبر! اِن علامات کے سوا، بڑادجّال بھی ا ٓئے گااور اس دجال کے علاوہ تیس دجّال اور بھی ہوںگے،جو سب نبی ہونے کا دعویٰ کریںگے ،حالانکہ نبوت کا سلسلہ ختم ہو چکا ہے۔ہما رے نبی محمد رسول اللہﷺ کے بعد قیا مت تک کو ئی نبی نہ ہو گا۔ان دجا لوں میںبہت سے گزر چکے جیسے ،مسیلمۂ کذّاب،طلیحہ بن خو یلد،سجا ح ، اسود عنسی، مر زاعلی محمد باب ،مر زا علی حسین بہاء اللہ، مرزا غلام احمدقادیانی ،وغیرہ اور جو با قی ہیں وہ ضرور ظاہر ہونگے۔

(نَعُوْذُبِا للّٰہِ مِنْہُمْ)