أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

فَاصۡبِرۡ اِنَّ وَعۡدَ اللّٰهِ حَقٌّ‌ وَّلَا يَسۡتَخِفَّنَّكَ الَّذِيۡنَ لَا يُوۡقِنُوۡنَ۞

 ترجمہ:

سو آپ صبر کیجئے ‘ بیشک اللہ کا وعدہ برحق ہے ‘ کہیں آپ کو وہ لوگ بےصبرانہ کردیں جو یقین نہیں رکھتے

اس کے بعد فرمایا کہیں آپ کو وہ لوگ بےصبرانہ کردیں جو یقین نہیں رکھتے ‘ اس سے مراد النضر بن الحارث ہے ‘ اس آیت میں نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) سے خطاب ہے اور اس میں تعرض ہے ‘ خطاب آپ سے ہے اور مراد آپ کی امت ہے۔

سورۃ الروم اختتام 

آج ٣ جمادی الثانیہ ١٤٢٣ ھ/١٣ اگست ٢٠٠٢ ء بہ روز منگل قبل العصر سورة الروم کی تفسیر مکمل ہوگئی۔ ٩ ١ جولائی کو یہ سورت شروع ہوئی تھی اس طرح چھبیس دنوں میں اس سورت کی تفسیر ختم ہوگء ‘ الہٰ العلمین آپ باقی سورتوں کی تکمیل بھی کرادیں ‘

واخر دعونا ان الحمد للہ رب العلمین والصلوۃ والسلام علی سیدنا محمد خاتم النبین وعلی آلہ و اصحابہ وازواجہ اجمعین۔

القرآن – سورۃ نمبر 30 الروم آیت نمبر 60