أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

ذَوَاتَاۤ اَفۡنَانٍ‌ۚ۞

ترجمہ:

جو سرسبز شاخوں والی دو جنتیں ہیں

’ ذواتا افنان “ کا معنی

الرحمن 48-49 میں فرمایا : جو سرسبز شاخوں والی دو جنتیں ہیں۔ سو تم دونوں اپنے رب کی کون کون سی نعمتوں کو جھٹلائو گے۔

اس آیت میں ” ذواتا افنان “ فرمایا ہے، حضرت ابن عباس (رض) اور دیگر مفسرین نے کہا : اس کا معنی ہے رنگ برنگ پھلوں والی دو جنتیں۔

مجاہد نے کہا : ” افنان “ کا معنی ہے : شاخیں ‘ یہ ” فنن “ کی جمع ہے۔ عکرمہ نے کہا : ” افنان “ کا معنی ہے، شاخوں کا دیواروں پر سایہ

القرآن – سورۃ نمبر 55 الرحمن آیت نمبر 48